یونین کونسلز،محلے اور گرد و پیش کی آبادیاں

پچھلی چند دھائیوں میں تورڈھیر کی آبادی چاروں طرف تیز رفتاری کے ساتھ آگے بڑھی ہے اور اب یہ گاؤں جنوب میں جبر.روزی آباد ، شمال میں جلبئی کے سرحدات تک چل گیا ہے اور کچھ آبادیاں ایسی بھی ہیں جو بھر کھلی زمینوں کی طرف کی گئی ہیں جیسے کہ فاروق بانڈہ ، رکھ ارٹ ، جلسی لار وغیرہ کی آبادیاں اور اس وجہ سے تور ڈھیر کی آبادی کا پھیلاو کافی زیادہ ہو گیا ہے. تورڈ ھیر گاؤں بنیادی طور پر دو یونین کونسلز متنی چنگن اور تورڈ ھیر پر مشتمل ہے. نکاسی آب کی ایک بڑی نالی ان دونوں کو جدا کرتی ہے.

Images

یہ نالی میاں گان محلہ سے شروع ہو کر اور مرکزی چوک سے ہوتے ہوۓ پلو سئی محلے کی جانب آگے بڑھتی ہے اور اس کے بعد کچھ فاصلہ جبر لار کے ساتھ طے کرکے آخر کار شہباز کی طرف چلی جاتی ہے اور وہاں سے شگہ ڈھوک کی نالیاں بھی اس میں شامل ہو چکی ہوتی ہیں. آگے چل کر یہ ہسپتال کی طرف سے آنے والے ایک حرا ب کے ساتھ مل جاتی ہے اور وہاں سینی اور شہباز لار سے آنے والی نالیاں بھی اس حراب میں شامل ہو جاتی ہے اور یہ نالی پھر جبر کی جانب بڑھتی ہیں. جبر سے آگے روزی آباد کے نزدیک اس کے ساتھ مشرق سے آنے والا دوسرا حراب بھی اس کے ساتھ مل جاتا اور یہ بڑا نہر پھرشیخ اولاد بابا کی قبرکے سامنے سے گزرنے کے بعد آگے آخر دریاۓ اباسین میں گر جاتا ہے.

Images

کسی وقت میں اس گاؤں کا پھیلاؤ محلہ سینی ، کولالان جماعت، ملکانان کورونہ اور میاں گان محلہ وغیرہ تک ہی محدود تھا شمال کی طرف بھی کھیت ہی کھیت تھے اور سڑک تک پہنچنے کے لیے انہی میں سے گزرنا پڑتا تھا لیکن اب حالت کچھ اور ہو گئی ہے. تور ڈھیر کے مختلف محلو ں کے نام کچھ اس طرح ہیں . محلہ میانگان ، محلہ ولایت خیل ،جلسے لار، پلوسئی ، ککئی ڈنڈہ ، شگہ ڈھوک، جبر لار،رکھ ارٹ ، مندلی کاکا کورونہ، خانانو کو سہ ، روڈ، سیار شہید محلہ، زوڑ بازار،محلہ سینی، گڑھی سر، ڈمانو کوسہ ، شگئی ، شغاسے ، ڈھوک(پراچگان)، ڈھوک اعوان، ڈھوک اعوان، چوبچے،شہباز لار، مصلی بانڈہ ،جهاںگیرۂ لار، لار، میاں کوٹے( قدیمی کاکا کورونہ)، دہ گڈوڈنڈ، جوگا( بابر فللنگ سٹیشن کے نزدیک مین جهاںگیرۂ پر)، میاں عیسیٰ لار، شہباز کور، کڑہ ور، لوڑی، کھودری وغیرہ.

Images